Naat is Praise and Appreciation to Muhammad PBUH ﷺ

نعت — شاہنواز فاروقی

نعت اگر رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی تعریف اور توصیف ہے تو نعت کے تصور کو شاعری تک محدود سمجھنا ٹھیک نہیں۔ غور کیا جائے تو سیرت نگاری دراصل ’’نثر کی نعت‘‘ ہے۔ اس اعتبار سے دیکھا جائے تو اسلامی تہذیب میں نعت کی روایت ایک بحرِ زخار ہے جو رسولِ اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کے شایانِ شان ہے۔ لیکن دلچسپ بات یہ ہے کہ ہمارے زمانے میں ایسے لوگ بھی موجود ہیں جو نعت کو سرے سے شاعری نہیں سمجھتے۔ ان کا خیال ہے کہ نعت محض عقیدت کا اظہار ہے اور اس میں ’’شاعرانہ عنصر‘‘ یا تو ہوتا ہی نہیں، یا ہوتا ہے تو بہت کم۔ لیکن یہ ایک غلط خیال ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ نعت کیا نعت کا تصور بھی شاعرانہ ہے۔ مگر اس دعوے کی دلیل کیا ہے؟
دنیا میں شاعری کا بڑا حصہ محبوب اور اس کی محبت کے تجربے کا بیان ہے۔ اس تناظر میں دیکھا جائے تو رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کا معاملہ یہ ہے کہ آپؐ انسانوں ہی کے نہیں اس کائنات کے خالق ومالک کے بھی محبوب ہیں۔ آپؐ انسانِ کامل ہیں۔ خاتم الانبیاء ہیں۔ باعثِ تخلیقِ کائنات ہیں۔ چنانچہ آپؐ سے بڑھ کر شاعری کا موضوع اور کون ہوسکتا ہے! اور نصف سے زیادہ شاعرانہ صنف اور کون سی ہوسکتی ہے! مگر مسئلہ یہ ہے کہ نعت لکھنا غزل، نظم، قطعہ یا رباعی لکھنے سے ہزار گنا زیادہ مشکل ہے۔ اس مشکل کی بہت بڑی بڑی وجوہ ہیں۔

shahnawazfarooqi.com