کشمیر پر بھارتی قبضہ اور نظریات کا تصادم

ہمیں یہ لکھتے ہوئے 29 سال ہوگئے ہیں کہ پاک بھارت تعلقات دو ملکوں، دو رہنمائوں اور دو قوموں کے تعلقات نہیں، بلکہ یہ دو مذاہب، دوتہذیبوں، دو نظریات، دو تاریخوں اور نفسیات کے دو دائروں کے تعلقات ہیں۔ مگر پاکستان کے فوجی اور سول حکمرانوں کے کان پر جوں تک رینگ کر نہ دی، حالانکہ پاکستان دو قومی نظریے اور ایک قومی نظریے کے تصادم کا حاصل ہے، اور قائداعظم نے صاف کہا تھا کہ پاکستان اُسی دن بن گیا تھا جس دن پہلے ہندو نے اسلام قبول کیا تھا۔ ایک اور مقام پر قائداعظم نے اس فقرے کی…

مزید پڑھئے

دو قومی نظریہ، قائد اعظم اور کشمیر

پاکستان عشق کی کبھی نہ ختم ہونے والی داستان بن کر رہ گیا ہے۔ اقبال زندہ ہوتے تو وہ عشق کی اس داستان پر مسجدِ قرطبہ جیسی نظم ضرور لکھتے۔ پاکستان کی داستان کا ایک پہلو یہ ہے کہ قائداعظم نے اپنی زندگی کا آخری حصہ تخلیقِ پاکستان کے لیے وقف کردیا۔ قیام پاکستان کے بعد برصغیر کے طول و عرض میں ہونے والے مسلم کُش فسادات میں 10 لاکھ مسلمان شہید ہوگئے۔ ہماری 80 ہزار سے زیادہ بیٹیاں، مائیں اور بہنیں اغوا ہوئیں۔ 1971ء میں البدر، الشمس اور جماعت اسلامی کے 10 ہزار لوگ ملک کے دفاع پر قربان…

مزید پڑھئے

مقبوضہ کشمیر کی دھماکہ خیز صورتحال، جنوبی ایشیا کا شیطان بھارت کشمیر کو ہڑپ کرگیا

امریکہ عالمی شیطان ہے اور بھارت جنوبی ایشیا کا شیطان۔ جس طرح امریکہ اچانک فلسطین، عراق، شمالی کوریا اور ایران کی صورتِ حال کو دھماکہ خیز بنادیتا ہے اُسی طرح بھارت نے اچانک مقبوضہ کشمیر کی صورتِ حال کو دھماکہ خیز بنادیا ہے۔اس دھماکہ خیزی سے پہلے بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں امرناتھ یاترا پر گئے ہوئے ’’یاتریوں‘‘ کو پیغام دیا کہ وہ یاترا یا مقدس سفر ختم کردیں۔ مقبوضہ کشمیر کے ایک بڑے تعلیمی ادارے میں اچانک موسم گرما کی تعطیلات کا اعلان کردیا گیا ۔ بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں مزید 28 ہزار فوجی تعینات کرنے کا اعلان…

مزید پڑھئے

آزادئ اظہار کے “تاج محل” میں “سینسر کی جھگیاں”۔

آزادیِ اظہار اگر حقیقی معنوں میں آزادیِ اظہار ہو تو وہ ایسا آئینہ ہوتی ہے جو حکمرانوں کے ظاہر ہی کو نہیں باطن کو بھی آشکار کردیتی ہے دنیا بھر کے حکمرانوں کو آزادیِ اظہار کے تاج محل میں ’’سینسر کی جھگیاں‘‘ تعمیر کرنے کا بڑا شوق ہے۔ پاکستان کے حکمرانوں میں یہ شوق کچھ زیادہ ہی ہے۔ چنانچہ وہ سینسر کی جھگی کو کئی منزلہ بنانے کی کوشش کرتے ہیں۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ جب تک کوئی سیاست دان اقتدار میں ہوتا ہے وہ آزادیِ اظہار کا مخالف ہوتا ہے، مگر اقتدار سے باہر ہوتے ہی وہ اور…

مزید پڑھئے

بھارتی جاسوس کا مقدمہ، بین الاقوامی عدالت انصاف کی ہندوستان پرستی

بین الاقوامی عدالتِ (نا) انصاف نے پاکستان سے کہا ہے کہ کلبھوشن کی سزائے موت ختم کرو اور اُس تک قونصلر رسائی کو ممکن بنائو۔ یہ ’’انصاف‘‘ نہیں، ’’ظلم‘‘ ہے۔ یہ انصاف پرستی نہیں، ’’بھارت پرستی‘‘ ہے۔ جرمن ادیب ٹامس مان نے کہا تھا کہ بیسویں صدی میں انسانی تقدیر سیاسی اصطلاحوں میں لکھی جائے گی۔ مان کی یہ پیشگوئی دوسو فیصد درست ثابت ہوئی۔ بیسویں صدی دو عالمی جنگوں کی صدی تھی، اور جنگ اپنی اصل میں ایک سیاسی مسئلہ ہے۔ بیسویں صدی مغربی نوآبادیات کے خاتمے کی صدی تھی، اور نوآبادیات کا خاتمہ ایک سیاسی معاملہ ہے۔ بیسویں…

مزید پڑھئے

ڈونلڈ ٹرمپ عمران ملاقات، امریکہ کا نیا ڈومور

کیا پاکستان پھر امریکی جال میں پھنس گیا؟ پاک امریکہ تعلقات کی تاریخ پاکستان کی سیاسی، معاشی اور سماجی قربانیوں اور امریکہ کی بے وفائیوں کی تاریخ ہے۔ پاکستان امریکہ کا اتحادی تھا مگر 1965ء کی جنگ میں امریکہ نے پاکستان کو اسلحہ فراہم کرنے سے انکار کردیا۔ 1971ء میں پاکستان ٹوٹ رہا تھا اور امریکہ کا ساتواں بحری بیڑا پاکستان نہ پہنچ سکا، اس لیے کہ وہ پاکستان کے لیے کبھی روانہ ہی نہیں ہوا تھا۔ ہم نے امریکہ کو ایف 16 طیاروں کے لیے ایک ارب ڈالر سے زیادہ پیشگی رقم ادا کی۔ امریکہ نے طیارے بھی نہ دیے…

مزید پڑھئے

پاکستان میں بڑی سیاسی جماعتوں کی “شرمناک سیاست” اور “المناک ورثہ”۔

ث’’شریفوں‘‘ اور ’’زرداریوں‘‘ کا کارنامہ یہ ہے کہ انہوں نے اپنے کروڑوں ووٹرز اور ہمدردوں کے لیے بدعنوانی کو ذہنی اور نفسیاتی اعتبار سے قابلِ قبول بناکر ان لوگوں کو ذہنی و نفسیاتی سطح پر کرپٹ بنادیا ہے پاکستان ایک نظریاتی ملک ہے، چنانچہ کم از کم پاکستان کی بڑی سیاسی جماعتوں کو ’’نظریاتی‘‘ ہونا چاہیے تھا۔ پاکستان ایک اسلامی ریاست ہے، چنانچہ کم از کم پاکستان کی بڑی سیاسی جماعتوں کو اخلاقی اصول کے تابع ہونا چاہیے تھا اور ان کی قیادت پر ’’صداقت‘‘ اور ’’امانت‘‘ کا سایہ ہونا چاہیے تھا۔ مگر ہماری بڑی سیاسی جماعتوں پر ’’کاذب‘‘ اور…

مزید پڑھئے

اے این پی راہنماؤں کی ٹارگٹ کلنگ

قتل کے واقعات نے حکومتی دعوؤں کی قلعی کھول دی ہے اے این پی کے عہدیداروں پر مختلف اوقات میں نامعلوم افراد کے قاتلانہ حملوں کے نتیجے میں اب تک صرف پشاور میں پارٹی کے سابق سینئر راہنما اور سینئر صوبائی وزیر بشیراحمد بلور سمیت 6 شخصیات جاں بحق ہوچکی ہیں، جبکہ میاں افتخار حسین اور حاجی غلام احمد بلور اپنے اوپر ہونے والے قاتلانہ حملوں میں اب تک محفوظ رہے ہیں، جن پر بدستور مزید حملوں کا خدشہ ظاہرکیا جارہا ہے۔ یاد رہے کہ اے این پی کے راہنمائوں پر حملوں کی ابتدا خیبر پختون خوا میں اے این…

مزید پڑھئے

نواز لیگ کی کشتی بھنور میں! رانا ثناء اللہ منشیات رکھنے کے الزام میں گرفتار

مسلم لیگ (ن) کی مشکلات میں مسلسل اضافہ ہوتا جا رہا ہے سابق وزیر اعظم اور پارٹی کے قائد میاں محمد نواز شریف کوٹ لکھپت جیل ہیں قید ہیں… ان کی حال ہی میں پارٹی کی نائب صدر بنائی جانے والی بیٹی مریم نواز بھی اپنے والد کے ساتھ ہی سزا یافتہ ہیں تاہم عدالت سے ضمانت اور سزا معطل کئے جانے کے بعد آج کل جیل سے باہر ہیں… پارٹی کے صدر قومی اسمبلی میں قائد میاں شہباز شریف بھی مختلف ریفرنسز میں قومی احتساب بیورو کے زیر تفتیش ہیںان کے فرزند پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف حمزہ…

مزید پڑھئے

بھارت امریکہ اتحاد، چین اور پاکستان کے لیے نئے خطرات

وزیراعظم نریندر مودی کی کامیابی کے بعد سے جہاں بھارت میں ہندوانتہا پسندوں کے حوصلے بلند ہوئے اور دیش کو حقیقی ہندو ریاست بنانے کی کوششیں تیز ہوگئی ہیں، وہیں دنیا بھر کے پاکستان و مسلم مخالف انتہا پسند اور قدامت پسند عناصر بھی ’’مودی ہے تو ممکن ہے‘‘ فلسفے کو آگے بڑھانے میں مصروف ہیں۔ یہ نعرہ انتخابی نتائج کے اعلان کے فوراً بعد بی جے پی کے سربراہ امیت شاہ نے بلند کیا تھا۔ شاہ صاحب کا کہنا ہے کہ یہ ہندوئوں کی تاریخ میں پہلا موقع ہے کہ جب پوری قوم اپنے نظامِ حکمرانی کو مذہی عقیدے…

مزید پڑھئے